کیا آپ پپیتا کھانے کے فوائد اور نقصانات جانتے ہیں؟


0

پپیتا کچا اور پکا دونوں صورتوں میں استعمال کیا جاتا ہے اور یہ دونوں ہی صورتوں میں انسانی صحت کے لیے فوائد کا حامل ہے۔ اس میں شامل وٹامن اے، وٹامن سی اور بے شمار معدنیات کی تھوڑی سے مقدار ہی انسانی جسم کو درکار وٹامن سی کی روز مرہ مقدار کو پورا کرسکتی ہے۔ یہ صحت بخش پھلوں میں سے ایک ہے اور اس کو اپنی غذا میں شامل کرنے سے آپ کو صحت کے مختلف فوائد مل سکتے ہیں جیسے موٹاپا، ذیابیطس اور دل کی بیماری کا خطرہ کم ہوجاتا ہے۔پپیتے کھانے کا اور کیا فوائد ہیں چلیں جانتے ہیں۔

Image Source: Unsplash

نظام ہاضمہ
پپیتا فائبر سے بھرپور پھل ہے اور اس کی زائد مقدار کی وجہ سے پپیتے کو قبض سے نجات دلانے اور نظامِ ہاضمہ کی صحت کو برقرار رکھنے کے لیے بھی بہت مفید سمجھا جاتا ہے۔ فائبر اور پانی کی مقدار زیادہ ہونے کی وجہ سے یہ پھل وزن کم کرنے میں بھی مدد فراہم کرتا ہے۔ اس پھل میں کیلوریز کی تعداد بھی کم ہوتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ پپیتے کو موٹاپے کے شکار افراد کے لیے مفید سمجھا جاتا ہے۔

ذیابیطس میں مفید
طبی ماہرین کے مطابق ٹائپ 2 ذیابیطس والے مریض فائبر والی غذا کھا کر فائدہ اُٹھا سکتے ہیں کیونکہ یہ خون میں گلوکوز، لیپڈ اور انسولین کی سطح کو بہتر بنا سکتا ہے۔

جلد صحتمند
پپیتے میں وٹامن سی اور لائکوپین موجود ہوتا ہے جو جِلد کی حفاظت میں مددگار ثابت ہوتا ہے اور پپیتے کو غذا میں شامل کرکے آپ ایکنی، جُھریاں اور جِلد کے دیگر نقصانات کو کم کرسکتے ہیں۔

Image Source: Unsplash

پیٹ کے کیڑے
اکثر لوگوں کے پیٹ میں کیڑے پائے جاتے ہیں جو صحت کے لیے بے حد نقصان کا باعث بنتے ہیں، کچے پپیتے کے دودھیا رس میں موجود معاون ہضم انزائم پاپائن پیٹ اور انتڑیوں کے کیڑوں کو ہلاک کرتا ہے لہٰذا اس کو خوراک میں شامل کرنے سے ان کیڑوں کے خاتمے میں مدد ملتی ہے۔

قوت مدافعت
پپیتے میں موجود وٹامن اے، سی اور ای ہمارے نظامِ قوتِ مدافعت کو طاقت بخشنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں یہی وجہ ہے کہ اگر آپ اس پھل کو اپنی خوراک میں شامل کریں گے تو اس سے آپ کامدافعتی نظام مضبوط ہوگا۔ ماہرین کہتے ہیں کہ ایک پپیتے میں 3 گرام فائبر، 15 گرام کاربس، ایک گرام پروٹین، 157 فیصد وٹامن سی، 33 فیصد وٹامن اے ، 14 فیصد وٹامن بی 9 اور 11 فیصد پوٹاشیم موجود ہوتا ہے۔

تاہم ، کم کیلوری والے اس پھل کے جہاں ان گنت فائدے ہیں وہیں اس کے کچھ نقصانات بھی ہیں جو پپیتے کے شوقین افراد کو معلوم ہونے چاہئیں۔

Image Source: Unsplash

الرجی کا خطرہ
پپیتے کا زیادہ استعمال مختلف قسم کی الرجیز کا باعث بن سکتا ہے جن میں سوجن، سردرد، خارش اور کھجلی وغیرہ شامل ہے۔ اس کےعلاوہ پپیتے کے اوپری حصے میں لیٹکس نامی خشک مادہ پایاجاتا ہے جو الرجی میں مزید اضافہ کرتا ہے، اسی لیے وہ افراد جو پہلے ہی الرجی کے مرض میں مبتلا ہیں وہ پپیتا کھانے سے گریز کریں۔

سانس کی بیماری
حد سے زیادہ پپیتے کا استعمال سانس کی مختلف بیماریوں میں بھی مبتلا کرسکتا ہے جن میں دمہ، سینے پر دبائو، ناک کا بند ہونا اور خرخراہٹ کے ساتھ سانس لینا شامل ہے۔

حاملہ خواتین کیلئے نقصان دہ
صحت کے لئے انتہائی مفید سمجھا جانے والا یہ پھل حاملہ خواتین کے لئےنقصان دہ ہوتا ہے۔ ماہرین حاملہ خواتین کو پپیتے کا استعمال نہ کرنے کی ہدایت دیتے ہیں کیونکہ یہ بچے کی نشوونما کو نقصان پہنچا سکتا ہے۔


Like it? Share with your friends!

0

What's Your Reaction?

hate hate
0
hate
confused confused
0
confused
fail fail
0
fail
fun fun
0
fun
geeky geeky
0
geeky
love love
0
love
lol lol
0
lol
omg omg
0
omg
win win
0
win

0 Comments

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Choose A Format
Personality quiz
Series of questions that intends to reveal something about the personality
Trivia quiz
Series of questions with right and wrong answers that intends to check knowledge
Poll
Voting to make decisions or determine opinions
Story
Formatted Text with Embeds and Visuals
List
The Classic Internet Listicles
Countdown
The Classic Internet Countdowns
Open List
Submit your own item and vote up for the best submission
Ranked List
Upvote or downvote to decide the best list item
Meme
Upload your own images to make custom memes
Video
Youtube, Vimeo or Vine Embeds
Audio
Soundcloud or Mixcloud Embeds
Image
Photo or GIF
Gif
GIF format