سرپھری لڑکی نے مال کے سیکیورٹی گارڈ کو تھپڑ مار دیا


0

کراچی کے شاپنگ مال میں ایک لڑکی نے مال کھلنے سے قبل از وقت اپنی گاڑی اندر لے جانے کی کوشش کی لیکن ڈیوٹی پر مامور سیکیورٹی گارڈ نے گاڑی کے لئے بیرئر نہ ہٹائے، جس پر لڑکی نے طیش میں آکر گارڈ کو تھپڑ مار دیا۔

خیال رہے کہ حکومت کی جانب سے کوویڈ-19 کی دوسری لہر کے سبب بڑھتے ہوئے واقعات سے نمٹنے کے لئے ملک بھر میں اسمارٹ لاک ڈاؤن اور مائیکرو لاک ڈاؤن نافذ کردیا گیا ہے۔ اس اسمارٹ لاک ڈاؤن میں ہوٹلوں ،بازاروں اور مالز کے اوقات میں تبدیلی کی گئی ہے اور اس پر سختی سے عمل درآمد بھی کیا جارہا ہے ۔

Image Source: Twitter


ایسے میں کراچی کے علاقے کلفٹن میں واقع ڈولمن شاپنگ مال کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر منظر عام پر آئی ہے، جس میں ایک ماڈرن خاتون صرف مال میں جانے کے داخلی بیرئر نہ ہٹانے پر مال کے سیکیورٹی گارڈ کو تھپڑ مارتی ہے اور اس کے ساتھ بدتمیزی بھی کرتی ہے ۔

دراصل ہوا کچھ یوں کہ جب یہ لڑکی مال پہنچی تو شاپنگ مال کے کھلنے میں کچھ وقت باقی تھا تو اس لڑکی نے زبردستی اپنی گاڑی اندر لیجانے کی کوشش کی لیکن سیکیورٹی گارڈ نے گاڑی کو اندر لیجانے سے روکا اور داخلی بیرئر نہ ہٹائے، اس ماڈرن لڑکی سے اپنی یہ بے عزتی سہی نہیں گئی اور اس نے طیش میں آکر سیکیورٹی گارڈ کو ہی تھپڑ رسید کردیا۔

تعجب کی بات تو یہ ہے کہ اس ویڈیو میں نظر آنے والی یہ ماڈرن اور پڑھی لکھی لڑکی خود غلطی پر ہونے کے باوجود اپنی غلطی تسلیم کرنے کے بجائے ناحق سیکیورٹی گارڈکی بے عزتی کرتی دیکھائی دے رہی ہے۔

ڈولمن مال میں سیکیورٹی کی جاب کرنے والا یہ غریب گارڈ تو محض اپنی ڈیوٹی سر انجام دے رہا تھا کیونکہ اگر وہ اپنی ڈیوٹی سے ذرا بھی کوتاہی برتتا تو فوری طور پر اسے نوکری سے برخاست کردیا جاتا۔

دیکھا جائے تو ہمارے معاشرے میں برتری کا احساس سر چڑھ کر بولتا ہے کیونکہ امیر طبقہ خود کو قانون سے بالاتر سمجھتا ہے۔ اگر آپ کے پاس پیسہ ہے طاقت ہے تو آپ کچھ بھی کر سکتے ہیں ، دوسروں کے سامنے کسی کی بھی عزت کو روندسکتے ہیں ۔ آخر کیوں ہمارے معاشرے کے امراء غریبوں کا استحصال کرنا اپنا حق سمجھتے ہیں؟ کیا اس ملک میں صرف پیسہ عزت جانچنے کا پیمانہ ہے۔ اس واقعے پر سوشل میڈیا صارفین میں بھی شدید غصہ پایا جارہا ہے اور لوگ اس سرپھری لڑکی پر تنقید کر رہے ہیں۔

واضح رہے کہ مختلف اداروں اور بازاروں میں سیکیورٹی گارڈ کی یہ معمولی نوکری کرنے والے ملازمین ہرگز ہمارے ناروا سلوک کے مستحق نہیں کیونکہ یہ بھی رزق حلال کمانے، اپنے کنبے کا پیٹ پالنے اور عزت کے ساتھ دو وقت کی روٹی کے لئے یہ نوکریاں کرنے پر مجبور ہوتے ہیں اس لئے صرف پیسے اور طاقت کی بنیاد پر ان لوگوں کے ساتھ بدسلوکی کرنے کی اجازت کسی کو نہیں ہونی چاہئیے۔


Like it? Share with your friends!

0

What's Your Reaction?

hate hate
0
hate
confused confused
0
confused
fail fail
0
fail
fun fun
0
fun
geeky geeky
0
geeky
love love
0
love
lol lol
0
lol
omg omg
0
omg
win win
0
win

0 Comments

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Choose A Format
Personality quiz
Series of questions that intends to reveal something about the personality
Trivia quiz
Series of questions with right and wrong answers that intends to check knowledge
Poll
Voting to make decisions or determine opinions
Story
Formatted Text with Embeds and Visuals
List
The Classic Internet Listicles
Countdown
The Classic Internet Countdowns
Open List
Submit your own item and vote up for the best submission
Ranked List
Upvote or downvote to decide the best list item
Meme
Upload your own images to make custom memes
Video
Youtube, Vimeo or Vine Embeds
Audio
Soundcloud or Mixcloud Embeds
Image
Photo or GIF
Gif
GIF format