پاکستان کی پہلی موبائل ریپیرنگ کرنے والی خاتون عاصمہ


0

زندگی کے ہر شعبے میں خواتین کا یکساں کردار اور نمائندگی ایک ترقی یافتہ ملک کی نشانی سمجھی جاتی ہے۔ پاکستان میں بھی خواتین ہر شعبے میں اپنے آپ کو منوا رہی ہیں، ایسی ہی ایک خاتون عاصمہ بھی ہیں، جنہیں پاکستان کی پہلی خاتون موبائل مکینک ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔

فیصل آباد کی عاصمہ نے موبائل فون ریپیرنگ کا باقاعدہ کورس کیا اور سرٹیفکیٹ حاصل کرنے کے بعد اپنی دکان کھول لی ہے۔

Image Source: Screengrab

موبائل ریپیر عاصمہ کے مطابق یہ فیلڈ صرف لڑکوں کے لئے مخصوص نہیں ،خواتین بھی موبال کی مرمت کا کام سیکھ سکتی ہیں ۔ان کا کہنا ہے کہ موبائل ریپیرنگ کا کورس کرنے سے انہیں بہت فوائد حاصل ہوئے ہیں اور اس کورس کی بدولت وہ آج اپنے شوہر کے شانہ بشانہ کام کر رہی ہیں۔

ایک رپورٹ کے مطابق پاکستان میں موبائل فون استعمال کرنے والی خواتین کی تعداد مردوں کی نسبت کم ہے اس کی وجوہات آگاہی کا فقدان، ناخواندگی اور ڈیجیٹل اسکلز نہ ہونا بھی ہے ،ایسے میں عاصمہ جیسی خواتین دوسروں کے لئے کسی مثال سے کم نہیں۔

مزید پڑھیں: پاکستان کی پہلی خاتون مکسڈ مارشل آرٹ فائٹر انیتا کریم

بلاشبہ جس طرح ہر روز نئے اسمارٹ فونز موبائل مارکیٹ میں آ رہے ہیں اسی طرح ان کی سروس اور ریپئرنگ کی بھی ضرورت بھی پڑتی رہتی ہے۔ ایسے میں خواتین کو مرد حضرات سے اپنا موبائل فون ٹھیک کروانے میں پرائیویسی کا مسئلہ لاحق رہتا ہے ،لیکن عاصمہ سے خواتین بلاخوف وخطر موبائل فون ٹھیک کرواتی ہیں۔ اس حوالے سے ان کا کہنا ہے کہ ان سے خواتین کو موبائل فون ٹھیک کروانے میں نہ تو نمبر چوری ہونا کا خطرہ ہوتا ہے اور نہ ہی تصاویر بلکہ ان کے موبائل کا تمام تر ڈیٹا محفوظ رہتا ہے۔

Image Source: Screengrab

اس وقت ملک میں موبائل فونز کی بڑھتے ہوئے استعمال کے پیش نظر پاکستان میں بہت سے ادارے سیل فون ہارڈ وئیر ریپئرنگ اور سافٹ ویئر یا فرم ویئر کی انسٹالیشن اور اپ ڈیٹس کے بارے میں بہترین ٹریننگ دے رہے ہیں جن سے بھرپور فائدہ اٹھایا جاسکتا ہے۔ عاصمہ نے بھی ان کورسز سے استفادہ حاصل کیا اورخواتین کے لئے ایک مثال بن گئیں اور اب وہ اپنا اور دوسروں کا موبائل خراب ہونے کی صورت میں اسے ٹھیک کرنے میں ماہر ہیں۔ عاصمہ کو دیکھا دیکھی ان کی دوستوں اور دیگر خواتین میں بھی موبائل ریپیرنگ کا شوق پیدا ہورہا ہے۔ عاصمہ اپنے پارٹنرز کے ساتھ موبائل کی ریپیرنگ کا کام کر رہی ہیں مگر وہ مستقبل میں یہ ہنر دوسری خواتین کو سیکھا کر انہیں بھی ہنرمند بنانے کی خواہش مند ہیں۔

مزید پڑھیں: مالی مشکلات کا حل، باہمت خاتون نے تندور لگا لیا

فیصل آباد کی عاصمہ کی طرح ملتان کی 24 سالہ عظمیٰ نواز نے مکینیکل انجینئرنگ کی تعلیم حاصل کر رکھی ہے اور وہ پاکستان کی پہلی خاتون مکینک ہونے کا اعزاز رکھتی ہیں ۔عظمیٰ نواز تعلیم مکمل کرنے کے بعد ایک برس سے ملتان میں ٹویوٹا ڈیلر شپ کمپنی میں مردوں کے ساتھ کام کررہی ہیں۔ وہ گیراج میں گاڑی کے پرزے ٹھیک کرنے سے لے کر گاڑی کے ٹائرز تبدیل کرنے اور بھاری آلات اٹھا کر کام کرنے میں بھی کبھی نہیں ہچکچاتیں۔

Story Courtesy: Bol News


Like it? Share with your friends!

0

What's Your Reaction?

hate hate
0
hate
confused confused
0
confused
fail fail
0
fail
fun fun
0
fun
geeky geeky
0
geeky
love love
0
love
lol lol
0
lol
omg omg
1
omg
win win
0
win

0 Comments

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Choose A Format
Personality quiz
Series of questions that intends to reveal something about the personality
Trivia quiz
Series of questions with right and wrong answers that intends to check knowledge
Poll
Voting to make decisions or determine opinions
Story
Formatted Text with Embeds and Visuals
List
The Classic Internet Listicles
Countdown
The Classic Internet Countdowns
Open List
Submit your own item and vote up for the best submission
Ranked List
Upvote or downvote to decide the best list item
Meme
Upload your own images to make custom memes
Video
Youtube, Vimeo or Vine Embeds
Audio
Soundcloud or Mixcloud Embeds
Image
Photo or GIF
Gif
GIF format