کراچی کے طالب علم نے بولنے سے قاصر مریضوں کیلئے موبائل ایپلیکیشن بنالی


0

موبائل فون کی ایجاد کے بعد انسانی زندگی میں اس قدر تبدیلیاں دیکھنے میں آئی ہیں کہ آج کا انسان یہ سوچتا ہے کہ آخر دنیا اب تک اس کے بغیر زندہ کیسے رہی۔ اس ایجاد نے نا صرف رابطوں کو آسان بنایا بلکہ ٹیکنالوجی کو بھی نئی جدت بخشی اور یوں نت نئی موبائل ایپلیکیشن بننے سے زندگی سہل ہوگئی۔ جدید ٹیکنالوجی کے اس دور میں ہر دن ایک نئی موبائل فون ایپ متعارف کروائی جارہی ہیں جسے دیکھ کر اور استعمال کرکے انسانی عقل دنگ رہ جاتی ہے۔

ایسی ہی ایک منفرد ایپلیکیشن کراچی سے تعلق رکھنے والے 13 سالہ طالبعلم نے بنائی ہے جو مریضوں کی دیکھ بھال کیلئے ہے جس کے ذریعے کسی بیماری کی وجہ سے بولنے اور حرکت کرنے سے قاصر مریض اپنی کیفیات سے دوسروں کو باآسانی آگاہ کرسکتے ہیں۔

Image Source: Screengrab

وائس آف امریکہ کی اردو سروس سے گفتگو کرتے ہوئے اس ایپ کو بنانے والے طالبعلم احمد جمال خان نے بتایا کہ ان کے والد کے ایک دوست ایسے مریضوں کا علاج کرتے ہیں جو فالج یا کسی اور بیماری کی وجہ سے بول نہیں سکتے اور حرکت بھی نہیں کرسکتے، ایسے مریض اپنی کیفیات دوسروں کو کیسے بتان کریں کہ انہیں کیا چیز چاہیے یا وہ کیا محسوس کر رہے ہیں ؟ ان مریضوں کو دیکھ کر طالبعلم کو یہ ایپلیکیشن بنانے کا آئیڈیا آیا۔

انہوں نے بتایا کہ ان کی موبائل ایپ کا نام “کیا بات ہے”، جوان مریضوں کی سہولت کیلئے بنائی گئی ہے جو بیماری کے سبب بات چیت نہیں کرسکتے اور ان کا جسم بھی حرکت نہیں کر سکتا ہے تو وہ صرف موبائل فون پر ٹچ کی مدد سے دوسروں کو اپنی کیفیت بتا سکتے ہیں۔

‘کیا بات ہے ‘، نامی اس اپپ کی نمایاں خصوصیات یہ ہیں کہ یہ اردو زبان میں بنائی گئی ہے جسے ہر کوئی با آسانی سمجھ سکتا ہے ، اس میں مرد اور خاتون کی آوازوں کے درمیان سوئچ کرنے کا آپشن موجود ہے، ایک الارم بٹن جو کسی ہنگامی صورت حال میں مریض کی دیک بھال کرنے والوں کو خبردار کرنے کے لیے ہے، ایک فوری چیٹ سیکشن بھی ہے کہ مریض جو کہنا چاہتا ہے اسے لکھ بھی سکتا ہے۔ اس ایپ کی سب سے اچھی بات یہ ہے کہ اسے خریدنا نہیں پڑتا بلکہ اسے مفت ڈاؤن لوڈ کیا جاسکتا ہے۔ احمد جمال خان کے مطابق وہ 4 سال کی عمر سے کوڈنگ کر رہے ہیں اور اب انہیں کوڈنگ کرنے میں بہت مزہ آتا ہے، انہوں نے سب سے پہلے کوڈنگ کرنا اپنی امی سے سیکھی۔

طالبعلم کا اپنی ایپ کے بارے میں کہنا ہے کہ انہیں ایپ کے اچھے ریوز مل رہے ہیں اور یہ لوگوں کیلئے فائدے مند ثابت ہو رہی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ جب اپلیکیشن پر لوگوں کے اچھے کمنٹ آتے ہیں تو انہیں خوشی ہوتی کہ لوگ ان کی ایپ استعمال کر رہے ہیں اور اس کی مدد سے انہیں اپنی بات دوسروں کو بتانے میں آسانی ہوگئی ہے۔ بلاشبہ ان جیسے ذہین طالبعلم اپنی صلاحیتوں کو بروۓ کار لاتے ہوئے ناصرف ملک کا نام روشن کرسکتے ہیں بلکہ ٹیکنالوجی کی دنیا میں جدت پیدا کرنے میں اہم کردار بھی ادا کرسکتے ہیں۔

گزشتہ دنوں بھی خیبرپختوانخواہ میں سوات کے ضلع مالم جبہ سے تعلق رکھنے والے دسویں جماعت کے 17 سالہ طالب علم وصی اللہ نے نابینا افراد کے لیے اسمارٹ شوز تیار کئے۔ یہ اسمارٹ شوز 120 سینٹی میٹر کے دائرے میں آنے والی کسی بھی رکاوٹ کے بارے میں صارف کو وائبریشن اور آواز کے ذریعے پہلے سے آگاہ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں ۔نابینا افراد کے لیے بنائے گئے ان جوتوں میں ٹرانسمیشنز لگائے گئے ہیں اور اس کی بیٹری سولرسسٹم سے چارج کی جاسکتی ہے۔ طالبعلم کے بنائے گئے یہ اسمارٹ شوز مناسب قیمت میں ہونے کے ساتھ کارکردگی میں بھی بہترین ہیں۔

مزید پڑھیں: کامسیٹس یونیورسٹی کا مچھروں کے ذریعے ویکسین لگوانے کا منصوبہ

علاوہ ازیں ،لیاری سے تعلق رکھنے والے تین طالب علموں نے حال ہی میں ایک ایسی ایپ بنائی ہے جو بصارت سے محروم افراد کو چھڑی پر سینسر جوڑ کر آسانی سے چلنے میں مدد دیتی ہے۔

Story Courtesy: VOA Urdu


Like it? Share with your friends!

0

What's Your Reaction?

hate hate
0
hate
confused confused
0
confused
fail fail
0
fail
fun fun
0
fun
geeky geeky
0
geeky
love love
0
love
lol lol
0
lol
omg omg
0
omg
win win
1
win

0 Comments

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Choose A Format
Personality quiz
Series of questions that intends to reveal something about the personality
Trivia quiz
Series of questions with right and wrong answers that intends to check knowledge
Poll
Voting to make decisions or determine opinions
Story
Formatted Text with Embeds and Visuals
List
The Classic Internet Listicles
Countdown
The Classic Internet Countdowns
Open List
Submit your own item and vote up for the best submission
Ranked List
Upvote or downvote to decide the best list item
Meme
Upload your own images to make custom memes
Video
Youtube, Vimeo or Vine Embeds
Audio
Soundcloud or Mixcloud Embeds
Image
Photo or GIF
Gif
GIF format