روالپنڈی: نوکری کے انٹرویو کا جھانسہ، خاتون کو زیادتی کا نشانہ بنادیا گیا


0

ایک اور دن ظلم اور بربریت کا ایک اور واقعہ، روالپنڈی تھانہ ریس کورس کے علاقے میں شادی شدہ خاتون کو ملازمت کا جھانسہ دے کر مبینہ زیادتی کا نشانہ بنا دیا گیا۔ مبینہ طور پر متاثرہ خاتون دو بچوں کی ماں ہے۔

ٹاؤن شپ لاہور کی رہائشی خاتون نے آصف نامی شخص پر ملازمت کا جھانسہ دے کر زیادتی کرنے پر ایف آئی آر درج کروادی ہے۔ اس کیس کے حوالے سے مدعیہ کا کہنا ہے کہ وہ اپنے شوہر کے ہمراہ ٹھوکر نیاز بیگ لاہور پر کیش اینڈ کیری اسٹور گئی جہاں پر آصف نامی شخص پراپرٹی کی تشہیر کے پمفلٹ تقسیم کر رہا تھا۔ میں نے پمفلٹ لے کر اپنے شوہر کو دیا جنہوں نے آصف کو فون کیا تو اس نے کہا کہ آپ لوگ راولپنڈی آجائیں تو نوکری دلوادوں گا۔

Image Source: File

خاتون کے مطابق وہ اپنے شوہر اور 2 بچوں کے ہمراہ راولپنڈی چلی گئی، وہاں پہنچ کر آصف کو فون کیا تو اس نے ہمیں صدر بلوایا، وہاں آصف نے مجھ سے کہا کہ انڑویو کے لیے جانا ہے لہذا بچوں کو شوہر کے پاس چھوڑ دو۔ وہاں سے ملزم مجھے پشاور روڈ پر واقع ہوٹل کی لابی میں لے گیا۔

لابی میں کچھ دیر انتظار کے بعد انہیں انٹرویو کے لیے کمرے میں بلایا گیا، چنانچہ جب وہ کمرے میں گئی تو آصف نے اس سے زبردستی کی، اس کے کپڑے پھاڑ دیے اور مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بناکر فرار ہوگیا۔

Image Source: File

متاثرہ خاتون کا کہنا تھا کہ اس کے شور کرنے پر بھی کوئی مدد کے لیے نہیں آیا، لہذا انہوں نے ہوٹل مینیجر کو اس واقعے سے آگاہ کیا جس نے خاوند اور پولیس کو اطلاع دی۔

جس پر ریس کورس پولیس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے ملزم کو گرفتار کرلیا۔ اس حوالے سے پولیس نے بتایا ہے کہ ملزم کو ریمانڈ کے لیے عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

پچھلے سال اسی طرح کے ایک واقعے پیش آیا تھا ، اسلام آباد میں رہنے والی ایک لڑکی ، اپنے دوست کی درخواست پر ، کراچی کی ایک کمپنی میں نوکری کی تلاش میں گئی تھی ، لیکن اسے بندوق کی نوک پر نہ صرف ہراساں کیا گیا بلکہ زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا۔تاہم پولیس نے مقدمہ درج کرنے کے باوجود کارروائی کرنے سے انکار کردیا کیونکہ وہ شخص با اثر نکلا تھا۔

مزید پڑھیں: روالپنڈی میں اجتماعی زیادتی کا ہولناک واقعہ، مرکزی ملزم گرفتار

پاکستان میں عصمت دری کے قوانین اور جنسی حملوں کو روکنے کے لیے سزا کی شدت کے بارے میں بحث جاری ہے۔ زیادتی کے بڑھتے ہوئے واقعات پر قابو پانے کے تناظر میں ، وزیر اعظم عمران خان نے نومبر 2020 میں ، جنسی جرائم میں ملوث مجرموں کے کیمیائی کاسٹریشن کے قانون کو اصولی طور پر منظوری دی تھی۔

یاد رہے کچھ عرصہ قبل لاہور لاہور کے علاقے ایل ڈی اے میں ایوینیو کے مقام پر خاتون اور ان کی کم عمر بیٹی کو رکشہ ڈرائیور نے ساتھی کے ساتھ مل کر بندوق کی نوک پر زیادتی کا نشانہ بنا دیا تھا۔ خاتون بیٹی ہمراہ بذریعہ بس وہاڑی سے لاہور پہنچی تھیں اور انہوں نے بہن کے گھر جانے کے لئے رکشہ کیا تھا۔


Like it? Share with your friends!

0

What's Your Reaction?

hate hate
0
hate
confused confused
0
confused
fail fail
0
fail
fun fun
0
fun
geeky geeky
0
geeky
love love
0
love
lol lol
0
lol
omg omg
0
omg
win win
0
win

0 Comments

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Choose A Format
Personality quiz
Series of questions that intends to reveal something about the personality
Trivia quiz
Series of questions with right and wrong answers that intends to check knowledge
Poll
Voting to make decisions or determine opinions
Story
Formatted Text with Embeds and Visuals
List
The Classic Internet Listicles
Countdown
The Classic Internet Countdowns
Open List
Submit your own item and vote up for the best submission
Ranked List
Upvote or downvote to decide the best list item
Meme
Upload your own images to make custom memes
Video
Youtube, Vimeo or Vine Embeds
Audio
Soundcloud or Mixcloud Embeds
Image
Photo or GIF
Gif
GIF format