گمنام بزرگ ہیرو نے مجبور رکشہ ڈرائیوروں کے رکشہ میں مفت یپٹرول ڈلوا دیا، ویڈیو وائرل


0

روشینوں کے شہر کراچی کے لوگ فراخدل ہیں اور دوسروں کی مدد کے لئے پیش پیش رہتے ہیں۔ چاہے لاک ڈاؤن ہو، تیز طوفانی بارشیں یا پھر کوئی اور مشکل خدمت خلق کے جذبے سے سرشار شہر قائد کے لوگ دوسروں کی مدد کے لئے ہمیشہ آگے آتے ہیں۔ حالیہ دونوں میں ملک میں پیٹرول مہنگا ہونے پر شہریوں نے خود ایک دوسرے کی مدد کرنا شروع کردی، ایسے میں ایک بزرگ شہری نےدرجنوں لوگوں کوگاڑیوں میں مفت پیٹرول ڈلواکر پورے شہر کر حیران کردیا۔

Image Source : Screengrab

یہ بزرگ کراچی کے علاقے اورنگی ٹاؤن 5 نمبر کے پیٹرول پمپ پر پہنچے، ان کے ہاتھ میں ایک پرچہ تھا جس پر 1 سے 90 تک نمبر درج تھے، بزرگ شہری نے پمپ انتظامیہ کو کہا اب جسکا کہوں اس سے پیٹرول کے پیسے مت لینا۔ ایک ایک کرکے پرچے سے نمبر کاٹتے گئے اور 90 کے قریب غریب رکشہ اور بائیک سواروں میں فی کس 700 روپے کا پیٹرول ڈلواکر رقم کی ادائیگی اپنی جیب سے کی۔ شہریوں نے بزرگ کی ویڈیو بنانے کی کوشش کی تو اس پر بھی لوگوں کو منع کرتے رہے، یہ گمنام شہری کون تھے اس حوالے سے معلوم نہ ہوسکا لیکن ان کے اس عمل نے پورے شہر میں  دھوم مچادی ہے۔

Image Source: Screengrab

اس وقت ملک میں پیٹرول کی قیمت 230 روپے سے بھی تجاوز کرچکی ہے جس کی وجہ سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ پاکستان کی تاریخ میں ایسا پہلی مرتبہ ہوا ہے کہ پیٹرول کی قیمت 230 روپے ہوئی ہے جس سے ہر چیز کی قیمتوں میں اضافہ ہوگیا ہے ،آٹا، چینی، گھی، دال، چاول سمیت تمام ضروریات زندگی کی چیز آسمان کی بلندیوں کو چھو رہی ہیں۔ تاہم، کراچی کے عوام میں پیٹرول مفت تقسیم کرنے کے اس عمل سے اس بزرگ شہری نے ایک مثال قائم کردی ہے کہ اگر صاحب استطاعت لوگ دوسروں کی مدد کے لئے آگے آئیں تو ہم ملکر ہر مشکل کو شکست دے سکتے ہیں۔

Image Source: Screengrab

ان بزرگ کے علاوہ شہر قائد کے ہی علاقے گلشن اقبال سے تعلق رکھنے والے شارق خٹک نامی نوجوان بھی اپنی رحم دلی کی عادت کے باعث مشہور ہوگیا ہے۔ اس نوجوان کی تنخواہ اتنی زیادہ نہیں مگر وہ ہر ہفتے پانچ سے 6 لیٹر پیٹرول چھوٹی بوتلوں میں بھر کر رکھتا ہیں اور جیسے ہی راستے میں کوئی مجبور شخص نظر آتا ہے اُس کو دیدیتے ہیں۔ شارق نے یہ کام کرنے کی شروعات اس وقت کی کہ جب انہوں نے ایک دن دفتر سے واپس آتے ہوئے ایک پُل پر فیملی دیکھی، جس کی موٹرسائیکل کا پیٹرول ختم ہوگیا تھا اور ٹنکی پر انکل دو بچے بٹھا کر چلارہے تھے جبکہ خاتون پیچھے پیدل پیدل آرہی تھیں، اس کے بعد انہوں نے پیٹرول تقسیم کرنا شروع کردیا۔

واضح رہے کہ پیڑولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے ساتھ توانائی کے بحران نے پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لیا ہواہےاور پاکستان سمیت یورپی ممالک کو بھی بجلی کی قلت کا سامنا ہے اور وہاں بھی توانائی کے بحران پر قابو پانے کے لئے حکومتی سطح پر اقدامات کیے جارہے ہیں۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ پاکستان کی عوام پہلے ہی روزمرہ اکھانے پینے کی اشیاء کی قیمتوں میں اضافے سے پریشان تھیں کہ ان پر پٹرولیم مصنوعات اور بجلی کی قیمتوں میں اضافے سے ان پر مزید بوجھ ڈال دیا گیا ہے۔

حالات کا تقاضا ہے کہ مہنگائی کا جتنا بوجھ عوام پر منتقل کیا جارہاہے اتنا ہی بوجھ سرکاری اشرافیہ پر بھی منتقل کیا جائے تاکہ حقیقتاً یہ فرق نظر آئے کہ حکومت کی جانب سے کیے جانے والے اقدامات میرٹ پر مبنی ہیں اور ملکی مسائل کے حل کے لئے ہیں نہ کہ صرف عوام کو کچلنے کیلئے۔ اگر حکومت کو بچت کرنا مقصود ہے تو عوام کے ساتھ سرکاری عہدیداروں کو بھی پابند کرے کہ وسائل کا بے دریغ اور غلط استعمال بند کریں اور جتنی بچت ممکن ہو کریں۔


Like it? Share with your friends!

0

What's Your Reaction?

hate hate
0
hate
confused confused
0
confused
fail fail
0
fail
fun fun
0
fun
geeky geeky
0
geeky
love love
0
love
lol lol
0
lol
omg omg
1
omg
win win
0
win

0 Comments

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Choose A Format
Personality quiz
Series of questions that intends to reveal something about the personality
Trivia quiz
Series of questions with right and wrong answers that intends to check knowledge
Poll
Voting to make decisions or determine opinions
Story
Formatted Text with Embeds and Visuals
List
The Classic Internet Listicles
Countdown
The Classic Internet Countdowns
Open List
Submit your own item and vote up for the best submission
Ranked List
Upvote or downvote to decide the best list item
Meme
Upload your own images to make custom memes
Video
Youtube, Vimeo or Vine Embeds
Audio
Soundcloud or Mixcloud Embeds
Image
Photo or GIF
Gif
GIF format