خواتین پولیس اہلکاروں کے موٹر سائیکل ٹریننگ پروگرام کے مثبت نتائج


0
17 shares
Image: Arab News

قیام پاکستان کی بنیاد سے لیکر پاکستان کی ترقی و خوشحالی میں اس قوم کی خواتین کا کردار ناصرف مثالی رہا ہے بلکہ قابل ستائش کارکردگی سے اپنے آپ کو ملکی اور بین الاقوامی سطح پر بھی خوب منوایا ہے۔ اگر ان کے حوصلے، عزم اور ہمت کی ہی بات کرلی جائے تو مشکل سے مشکل حالات کا ڈٹ کر سامنا کرنے سے بھی کبھی گریز نہیں کرتیں۔

اس ہی سلسلے سے منسلک ایک خبر جس میں سندھ پولیس کی جانب سے لیا گیا ایک بڑا اقدام، جس کے تحت سندھ پولیس کی جانب سے خواتین اہلکاروں کے لئے موٹر سائیکل ٹریننگ پروگرام کا آغاز کیا گیا جس کے تحت خواتین پولیس کو موٹر سائیکل ٹریننگ فراہم کی گئی۔ جس سے وہ ناصرف اپنے دفتری امور بہترین طریقے سے سرانجام دے رہیں ہیں بلکہ اس سے ان کی ذاتی زندگی کے معاملات پر بھی مثبت اثر نظر آرہا ہے اور وہ بااختیار خواتین بھی بن رہیں ہیں ۔ اس پروگرام سے اس وقت تقریباً 80 کے قریب خواتین پولیس کانسٹیبل منسلک ہیں۔ جبکہ اس پروگرام کا ابتدا کرنے والے پولیس سپریٹنڈنٹ ندیم احمد جنہوں نے انڈونیشیا میں اقوامی متحدہ کی نمائندگی کرنے کے بعد وطن واپسی پر اس پروگرام کا آغاز کیا تھا۔

Karachi Police Women Empowerment
Image:Arab News

جبکہ ان ہی خواتین پولیس کانسٹیبل میں ایک نام افشاں مرتضی کا بھی ہے جو ان سات خواتین اہلکاروں میں شامل ہیں جنہوں نے حال ہی میں اپنا ٹریننگ ٹائم مکمل کیا۔اور

عرب نیوز کے نمائندے سے بات کرتے ہوئے افشاں مرتضی نے بتایا کہ وہ کراچی کے علاقے اسٹیل ٹاؤن کی رہائشی ہیں، موٹر سائیکل ٹریننگ پروگرام کا حصہ بن کر اب بہت خوش ہیں کیونکہ ان کی زندگی کی کافی مشکلات کم ہوگئیں وہ اب اپنے دفتر وقت پہنچتی ہیں ورنہ اس سے قبل ان کو اپنی ڈیوٹی پر فیروز آباد تھانے آنے جانے میں ہی 2،3 گھنٹے لگ جایا کرتے تھے۔ وہ بس میں سفر طے کیا کرتیں تھی جس سے ان کی تمام تر ہمت آنے جانے کے سفر میں ختم ہوجایا کرتی تھی۔ تاہم اپنی موٹر سائیکل پر ان کا یہ سفر مشکل سے آدھے گھنٹے کا ہوگیا ہے، ساتھ ہی اس لاک ڈاؤن کے عرصے میں جہاں پبلک ٹرانسپورٹ بند تھی وہیں افشاں کو آنے جانے میں کوئی مشکل پیش نہ آئی۔ اب وہ اپنے آپ کو پہلے سے زیادہ باہمت اور بااختیار سمجھتی ہیں۔

Karachi Police Women Empowerment
Image:Arab News

جبکہ دوسری جانب اس پروگرام کا آغاز کرنے والے پولیس سپریٹنڈنٹ ندیم احمد نے عرب نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا کہ جب دنیا بھر کے مسلم ممالک اپنی خواتین اہلکاروں کو بااختیار بنا رہے ہیں تو پاکستان کیوں نہیں بناسکتا ہے، انہوں نے مزید بتایا کہ اس پروگرام ان کو اس وقت آیا جب انہوں نے اس بات کو نوٹس کیا کہ خواتین پولیس اہلکاروں کو ڈیوٹی پر آنے جانے میں کتنی مشکلات پیش آرہی ہیں۔ اس سلسلے میں پولیس ڈیپارٹمنٹ نے اپنی خواتین اہلکاروں کو اس پروگرام پر ناصرف آمادہ کیا بلکہ ان کی حوصلہ افزائی بھی کی۔

Karachi Police Women Empowerment
Image:Arab News

انہوں اس پر مزید بتایا کہ یہ پروگرام اتنا آسان نہیں تھا کئی مشکلات آئیں لیکن جب آپ کوئی ایک مثبت کام کرنے کی ٹھان لیں تو پھر اللہ آپ کی مدد ضرور کرتا ہے۔ ساتھ ہی انہوں یہ بھی بتایا کہ کئی اہلکاروں کو پروگرام کے دوران کافی چوٹیں بھی آئیں لیکن ان کے عزم و حوصلے کافی بلند تھے۔

Source: Arab News


Like it? Share with your friends!

0
17 shares

What's Your Reaction?

hate hate
0
hate
confused confused
0
confused
fail fail
0
fail
fun fun
0
fun
geeky geeky
0
geeky
love love
0
love
lol lol
0
lol
omg omg
0
omg
win win
0
win

0 Comments

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Choose A Format
Personality quiz
Series of questions that intends to reveal something about the personality
Trivia quiz
Series of questions with right and wrong answers that intends to check knowledge
Poll
Voting to make decisions or determine opinions
Story
Formatted Text with Embeds and Visuals
List
The Classic Internet Listicles
Countdown
The Classic Internet Countdowns
Open List
Submit your own item and vote up for the best submission
Ranked List
Upvote or downvote to decide the best list item
Meme
Upload your own images to make custom memes
Video
Youtube, Vimeo or Vine Embeds
Audio
Soundcloud or Mixcloud Embeds
Image
Photo or GIF
Gif
GIF format