ڈاکٹر ماہا کیس: پستول فراہم کرنے والے دونوں ملزمان پولیس ریمانڈ پر


1
1 point

کراچی کے علاقے ڈیفنس میں خودکشی کرنے والی ڈاکٹر سیدہ ماہا شاہ کو اسلحہ فراہم کرنے والے دونوں ملزمان کے خلاف سندھ آرمز ایکٹ اور دیگر دفعات کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا ہے ۔ عدالت جوڈیشل مجسٹریٹ جنوبی نے پولیس کو دونوں ملزمان کا 2 روزہ ریمانڈ پر دے دیا ہے۔

ایس ایس پی ساؤتھ شیراز نذیر کے مطابق ڈاکٹر ماہا شاہ کو اسلحہ اور گولیاں فراہم کرنے کے الزام میں سعد صدیقی اور تابش قریشی نامی دو ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ نائن ایم ایم پستول سعد صدیقی کی ملکیت تھی جبکہ تابش قریشی نے ماہا علی کے مانگنے پر پستول فراہم کی۔ پولیس نے مزید بتایا کہ واقعہ کو خودکشی قرار دیا گیا ہے تاہم پولیس کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر ماہا شاہ نے اپنے دوست جنید کے تشدد سے تنگ آکر خودکشی کی۔

dr. maha life police reports
Image Source: Facebook

جبکہ جنید خان نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ وہ ڈاکٹر ماہا شاہ کو نجی ہسپتال میں پک اینڈ ڈراپ دیتا تھا۔ جس روز ماہا علی نے خودکشی کی جنید کو گھر آنے کا منع کردیا تھا۔ جنید کے مطابق گزشتہ چار سال سے دونوں کے درمیان تعلقات تھے اور وہ جلد شادی کرنے والے تھے ۔

دوسری جانب پولیس کو بیان دیتے ہوئے ڈاکٹر ماہا شاہ کی دوست نے بتایا کہ ماہا علی کا اکثر اپنے والدین سے جھگڑا رہتا تھا، جس کی وجہ سے وہ بہت پریشان رہتی تھی اور ڈپریشن کا شکار تھی۔ ڈاکٹر ماہا شاہ کے والدین کے مابین علحیدگی ہوچکی ہے اور دونوں ہی دوسری شادی کرچکے ہیں۔ ڈاکٹر ماہا شاہ اپنے والد کے ساتھ رہا کرتی تھیں۔

dr. maha life police reports
Image Source: Twitter

واضح رہے کہ میرپورخاص سے تعلق رکھنے والے ماہا علی کے والد آصف علی شاہ بچوں کی پڑھائی اور ملازمت کے سلسلے میں کراچی میں مقیم ہیں ۔ ڈاکٹر ماہا شاہ کی خودکشی سے محض دو ہفتے قبل ہی کراچی کے علاقے ڈیفنس گزری کے اس گھر میں بطور کرائے دار شفٹ ہوئے تھے جہاں ڈاکٹر ماہا شاہ نے گھر کی بالائی منزل کی واش روم میں خود پر گولی چلائی تھی۔

اس خودکشی کے حوالے سے پولیس کی جانب سے ایک حیران کن انکشافات بھی سامنے آیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ ماہا شاہ نے نومبر 2018 کو اپنی سابقہ رہائشی عمارت کی چھت سے کود کر خودکشی کرنے کی کوشش کی تھی مگر وہ ناکام رہی جس کی وجہ دوست جنید خان کا رویہ بتایا گیا تھا بعد ازاں اپنے دوستوں کے سمجھانے پر ماہا شاہ نے خودکشی کا ارادہ ترک کر دیا ۔

یاد رہے ڈاکٹر سیدہ ماہا شاہ کے والد آصف علی شاہ میرپور خاص میں واقع مزار گرھوڑ شریف کے گدی نشین ہے جبکہ ساتھ ہی ساتھ سیدہ ماہا شاہ کی نماز جنازہ اور تدفین بھی آبائی علاقے میرپور میں ہی ہوئی ہے۔


Like it? Share with your friends!

1
1 point

What's Your Reaction?

hate hate
0
hate
confused confused
0
confused
fail fail
0
fail
fun fun
0
fun
geeky geeky
0
geeky
love love
0
love
lol lol
0
lol
omg omg
0
omg
win win
0
win

0 Comments

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Choose A Format
Personality quiz
Series of questions that intends to reveal something about the personality
Trivia quiz
Series of questions with right and wrong answers that intends to check knowledge
Poll
Voting to make decisions or determine opinions
Story
Formatted Text with Embeds and Visuals
List
The Classic Internet Listicles
Countdown
The Classic Internet Countdowns
Open List
Submit your own item and vote up for the best submission
Ranked List
Upvote or downvote to decide the best list item
Meme
Upload your own images to make custom memes
Video
Youtube, Vimeo or Vine Embeds
Audio
Soundcloud or Mixcloud Embeds
Image
Photo or GIF
Gif
GIF format